Azad Jammu and Kashmir President Sardar Masood Khan

  • by
Azad Jammu and Kashmir President Sardar Masood Khan

  لاہور  ( نیوز ڈیسک )  صدر آزاد جمو ں کشمیر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ بھارتی حکمرانوں نے پاکستان اور آزادکشمیر کی سرزمین پر آکر جنگ لڑنے کی جو تازہ دھمکی دی ہے وہ ہمارے کان اور آنکھیں کھولنے کے لئے کافی ہونی چاہیے کیونکہ یہ دھمکیاں کوئی عام آدمی نہیں بلکہ بھارت کا وزیر اعظم، وزیر دفاع اور نیشنل سکیورٹی ایڈوائزر دے رہا ہے جس کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ہے۔ لاہور میں مرکزی جمعیت اہلحدیث کے زیر اہتمام کشمیر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صدر آزادکشمیر نے کہا کہ بھارت دنیا بھر سے اسلحہ اور جنگی سازوسامان حاصل کر رہا ہے اور اُس کے سارے اسلحے کا رُخ پاکستان کی طرف ہے اس لئے اب وقت آگیا ہے کہ ہم ہوشیار اور بیدار ہوں اور دشمن کے عزائم کو بھانپ کر آنے والے خطرات کا مقابلہ کرنے کے لئے تیاری کریں۔ کشمیر کانفرنس سے مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے امیر پروفیسر ساجد میر، علامہ ابتسام الہی ظہیر، علامہ متعصم الہی ظہیر، سید عتیق الرحمان شاہ، جمعیت اہلحدیث آزادکشمیر کے سیکرٹری جنرل دانیال شہاب مدنی اور حافظ بابر فاروق رحیمی نے بھی خطاب کیا۔ صدر آزادکشمیر نے اپنے خطاب میں کہا کہ بین الاقوامی نظام غیر موثر ہو چکا ہے کیونکہ وہ کمزوروں کے بجائے طاقتور کا ساتھ دے رہا ہے۔ اس وقت دنیا کے بڑے طاقتور ممالک مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم اور انسانیت کے خلاف جرائم پر یا تو خاموش ہیں یا بھارت کا ساتھ دے رہے ہیں۔ ہمیں ان حالات میں خود بھی جاگنا ہو گا اور پوری امت مسلمہ کو بھی جگانا ہو گا۔ دشمن ایک طرف تو اپنی فوجی طاقت سے ہمیں کچلنا چاہتا ہے اور دوسری جانب ہماری صفوں میں دراڑیں ڈال کر ہماری طاقت کو ختم کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چھوٹی چھوٹی کانفرنسیں اور ہلکے پھلکے بیانات دینے سے کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہو گا بلکہ ہمیں عوامی تحریک کا ایک سیلاب لانا ہو گا اور اس تحریک کو پوری دنیا میں پھیلانا ہو گا

اور اگر ہم ایسا کرنے میں کامیاب ہو گے تو پھر اقوام متحدہ بھی آپ کی طرف متوجہ ہو گی اور دنیا کے بااثر ممالک بھی اپنی خاموشی توڑنے پر مجبور ہونگے۔ صدر آزادکشمیر نے کہا کہ مقبوضہ جموں وکشمیر کے لوگ محصور اور مجبور ہیں لیکن ہم آزاد اور خودمختارہیں اس لئے یہ آزادکشمیر اور اہل پاکستان کی ذمہ داری ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام کی آواز کو دنیا کے کونے کونے میں پھیلائیں اور اس آواز کی بازگشت پیرس، نیویارک، لندن، برسلز، جنیوا،ویانا، ڈھاکہ اور کوالالمپور میں بھی گونجنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اس مقصد کے لئے بیرون ملک آباد ایک کروڑ سے زیادہ کشمیری اور پاکستانی کمیونٹی کو متحرک کرنے کی ضرورت ہے۔ اگرچہ وہ اپنا کردار ادا کر رہے ہیں لیکن بدلے ہوئے حالات میں ان کوششوں کو مزید تیز تر کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے سامنے ویتنام جنگ اور جنونی افریقہ میں نسل پرستی کے خلاف تحریک کا ماڈل موجود ہے جہاں عوامی طاقت کے دباؤ سے امریکہ کو ویتنام میں جنگ بند کرنے اور جنوبی افریقہ میں نسل پرستی کو ختم کرنے پر مجبور کردیا گیا تھا۔ صدر آزادکشمیر نے کہا کہ اس وقت کشمیر انسانیت کا مسئلہ بن چکا ہے اور انسانیت پر یقین رکھنے والی دنیا تک رسائی حاصل کر کے اُسے اس انسانی بحران کو حل میں کرنے میں اپنا کردار ادا کرنے پر مجبور کیا جاسکتا ہے۔ بارہ ربیع الاول کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ حضو ر نبی اکرمﷺ کی ذات بابرکت مسلمانان عالم کے لئے حتمی قائد کی حیثیت رکھتی ہے جن سے بڑھ کر متبرک اور محترم ہستی اور کوئی نہیں ہو سکتی۔ ہم اپنے والدین، قوم اور قبیلہ کی توہین شاید برداشت کر لیں لیکن حضور نبی مہربانﷺ کی شان میں معمولی گستاخی بھی کبھی برداشت نہیں کرسکتے کیونکہ ہم پوری طرح یہ سمجھتے ہیں کہ وہ صرف مسلمانوں کے نہیں بلکہ پوری عالم انسانیت کے محسن اور مربی تھے۔ انہوں نے کہا کہ فرانس میں حضور نبی اکرمﷺ کی شان مبارک میں گستاخی سے جہاں ہمارے دل زخمی ہوئے ہیں وہاں اس بات پر اطمینان بھی ہے کہ پہلی بار پورے عالم اسلام نے اتحاد و اتفاق سے اس پر اپنا شدید ردعمل ظاہر کیا ہے۔ اس وقت فرانس کی مصنوعات کے بائیکاٹ کی ایک جاندار مہم ٹوکیو سے واشنگٹن تک چل رہی ہے اور اس مہم کی تپش پیرس میں پوری طرح محسوس کی جا رہی ہے۔ اس طرح کی ایک مہم بھارت کے خلاف چلانے کی ضرورت ہے کیونکہ وہاں بھی کشمیریوں کو محمد عربی ﷺ کے غلام ہونے کی سزا دی جارہی ہے۔

LAHORE: Azad Jammu and Kashmir President Sardar Masood Khan has said that the latest threat made by the Indian rulers to come and fight on the territory of Pakistan and Azad Kashmir should be enough to open our ears and eyes as these threats are against any common man. No, the Prime Minister of India, the Minister of Defense and the National Security Advisor is giving which cannot be ignored. Addressing the Kashmir Conference organized by Central Jamiat Ahle Hadith in Lahore, the President of Azad Kashmir said that India was procuring arms and munitions from all over the world and all its armaments were directed towards Pakistan. Be alert and vigilant and prepare to face the coming dangers by sensing the enemy’s intentions. Amir of Central Jamiat Ahle Hadith Pakistan Prof. Sajid Mir, Allama Ibtisam Elahi Zaheer, Allama Mutasim Elahi Zaheer, Syed Atiq-ur-Rehman Shah, Secretary General of Jamiat Ahle Hadith Azad Kashmir Daniel Shehab Madani and Hafiz Babar Farooq Rahimi also addressed the Kashmir Conference. In his address, the Azad Kashmir president said that the international system has become ineffective because it is supporting the strong instead of the weak. At present, the world’s most powerful countries are either silent on the atrocities and crimes against humanity in occupied Kashmir or are supporting India. In these circumstances, we have to wake up ourselves and the entire Muslim Ummah. On the one hand, the enemy wants to crush us with his military power and on the other hand, he wants to destroy our power by creating cracks in our ranks. “Small conferences and light-hearted statements will not solve the Kashmir issue, but we have to bring a flood of people’s movement and spread this movement all over the world, and if we succeed in doing so,” he said. Then the United Nations will be attracted to you and the influential countries of the world will be forced to break their silence. The President of Azad Kashmir said that the people of Occupied Jammu and Kashmir are trapped and compelled but we are free and independent so it is the responsibility of Azad Kashmir and the people of Pakistan to spread the voice of the oppressed people of Occupied Kashmir to the corners of the world. The echoes should resonate in Paris, New York, London, Brussels, Geneva, Vienna, Dhaka and Kuala Lumpur. He said that more than 10 million Kashmiri and Pakistani communities living abroad need to be mobilized for this purpose. Although they are playing their part, these efforts need to be stepped up in the changed circumstances. “We have the Vietnam War and the model of the anti-racism movement in fanatical Africa, where pressure from the people forced the United States to end the war in Vietnam and end racism in South Africa,” he said. The President of Azad Kashmir said that Kashmir has now become a problem of humanity and by gaining access to the world which believes in humanity, it can be compelled to play its role in resolving this humanitarian crisis. Expressing his views on the 12th of Rabi-ul-Awal, President Sardar Masood Khan said that the person of the Holy Prophet (PBUH) is the ultimate leader of the blessed Muslim world and there can be no one more blessed and respected than him. We may tolerate insults to our parents, nation and tribe, but we can never tolerate even the slightest insult to the Holy Prophet (PBUH) because we fully understand that he was a benefactor and mentor not only of Muslims but of the entire world of humanity. He said that in France, where our hearts have been wounded by the insolence of the Holy Prophet (PBUH), we are also satisfied that for the first time the entire Islamic world has reacted to it with unity and unanimity. A vigorous campaign to boycott French products is currently underway from Tokyo to Washington, and the heat of the campaign is being felt in Paris. Such a campaign needs to be launched against India because even there Kashmiris are being punished for being slaves of Muhammad Arabi.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *